جب ہوا خاک تو گھر خاک شفا میں پایا

ادب حسینی

2018-08-01

337 مشاہدہ

بخدا فارس میدان تہور تھا حر                     ایک دو لاکھ سواروں میں بہادر تھا حر

دار دنیا میں ابوذر کی طرح حر تھا حر          گوہر تاج سر عرش ہو وہ در تھا حر

                      ڈھونڈ لی راہ خدا کام بھی کیا نیک ہوا

                     پاک طینت تھی تو انجام بھی کیا نیک ہوا

بخت جب ہوگیا بیدار زہے عزت و جاہ         حر پہ کیا فضل خدا ہوگیا اللہ اللہ

پیشوائی کو گئے آپ شہ عرش پناہ              خضر قسمت نے بتادی اس فردوس کی راہ

                    مدتوں دور رہے جو وہ قریب ایسا ہو

                  بخت ایسے ہوں اگر ہو تونصیب ایسا ہو

نار سے نور کی جانب اسے لائی تقدیر         ابھی ذرہ تھا ابھی ہوگیا خورشید منبر

شافع حشر نے خوش ہو کے بحل کی تقصیر   تکیہ زانوئے شبیر ملا وقت اخیر

                       اوج و اقبال حشم فوج خدا میں پایا

                    جب ہوا خاک  تو گھر خاک شفا میں پایا

نئے مواضیع

اکثر شائع

شایدآپ کو بھی پسند آئے