مرجعیت عظمیٰ نے اصلاحاتی مطالبات پر عمل پیرا ہونے پر زور دیا ہے

اخبار وتقارير

2017-10-15

274 مشاہدہ

اصلاحاتی مطالبات پر عمل پیرا ہونے کے لئے مرجعیت عظمیٰ  نے عقل و ضمیر سے سنجیدہ ہونے کی ترغیب دی اور بعض لوگوں کی شخصی منفعت اور مصلحت سے اجتناب کی ہدایت کی جوکہ وطن کی امن و سلامتی کے لئے  ضمانت ہیں۔

دینی مرجعیت کے نمائندے علامہ سید احمد صافی نے خطبہ جمعہ میں کہا کہ "جب بات اصلاحات کی ہو تو انسان کو اپنی عقل اور صدائے ضمیر پر عمل پیرا ہونا چاہیئے نہ کہ اپنی مصلحت کو مدنظر رکھے۔ضروری ہے کہ انسان کلام حق کو مدنظر رکھےاور اگر حق سے روگردانی کرے گا تو  ناپسندیدہ نتائج برآمد ہونگے کیونکہ عقل کا ہونا ایک بہت بڑی نعمت ہے اور اس سے بہرہ ور ہونا چاہیئے نہ صرف اس سے فقط اپنی مصالح مد نظر رکھی جائیں بلکہ اس کی بدولت اصلاحات بھی لائی جاسکتی ہیں جس کی واضح مثال قوم نوح کا قصہ ہے اس سے پہلے کہ طوفان پہنچ جائے  ۔۔۔۔۔

نئے مواضیع

اکثر شائع

شایدآپ کو بھی پسند آئے